جو مدارس رجسٹرڈ نہیں ہوں گے وہ کام نہیں کر سکیں گے، شفقت محمود

وفاقی وزیر تعلیم کا ملک بھر میں ایک نصاب تعلیم مارچ تک نافذ کرنے کا اعلان

فوٹو: فائل

وفاقی وزیر تعلیم و فنی تربیت  شفقت محمود نے کہا ہے کہ ملک بھر میں موجود تمام مدارس کو رجسٹرڈ کیا جائے گا، جو مدارس رجسٹرڈ نہیں ہوں گے وہ کام نہیں کر سکیں گے۔

مقامی میڈیا کے مطابق آج  ایک پریس کانفرنس میں وزیر تعلیم نے مدارس کی رجسٹریشن کے حوالے سے خصوصی گفتگو  میں  کہا ملک بھر میں تمام مدارس کو رجسٹرڈ کیا جا رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مدارس کی رجسٹریشن چند شرایط کے مطابق ہوگی، رجسٹریشن کے لیے ریجنل آفسز مدارس انتظامیہ کی مدد کریں گے۔

وزیر تعلیم شفقت محمد  نے واضح طور پر عندیہ دیا کہ جو مدارس رجسٹرڈ نہیں ہوں گے وہ کام ہی نہیں کر سکیں گے، رجسٹرڈ ہونے والے مدارس کی مالی مدد  بھی کی جائے گی۔

شفقت محمود کا کہنا تھا کہ مدارس اب وفاقی وزارتِ تعلیم سے منسلک ہوں گے، ہم مدارس کی بڑی قدر کرتے ہیں اور ان کے نصابِ تعلیم کو از سرنو ترتیب دینے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ مدارس کے طلبہ اور اساتذہ کو ٹریننگ بھی دی جائے گی، یہ 6 مئی کو طے ہوا تھا، جو مضامین میٹرک کے لیے لازمی ہیں وہ مدارس میں بھی لازمی ہوں گے، لازمی مضامین کا امتحان فیڈرل بورڈ لے گا۔

وزیر تعلیم شفقت محمود کا یہ بھی کہنا تھا کہ دینی مدارس کو بنک کی سہولت بھی دی جائے گی۔

واضح رہے کہ اپریل میں کہا گیا تھا کہ ملک بھر کے دینی مدارس کو وزارت تعلیم کے ماتحت لانے کے لیے جیوٹیگنگ اور رجسٹریشن جاری ہے۔ اس حوالے سے نیکٹا نے پہلی رپورٹ بھی تیار کر لی ہے، پنجاب میں 90 فیصد رجسٹریشن مکمل کرلی گئی ہے۔

یاد رہے کہ جمیعت علمائے اسلام ف کے اور متحدہ مجلس عمل کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے اعلان کررکھا ہے کہ وہ  دینی مدارس پر کنٹرول حاصل کرنے کی اجازت نہیں دیں گے اوراس کی مزاحمت کریں گے۔

یہ بھی پڑھیے: دینی مدارس پر کنٹرول کی اجازت نہیں دیں گے، مولانا فضل الرحمان

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز