ایف اے ٹی ایف کا پاکستان کو گرے لسٹ میں برقرار رکھنے کا فیصلہ

ایف اے ٹی ایف کے اعلامیے کے مطابق پاکستان نے تمام ایکشن پوائنٹس پر پیش رفت دکھائی ہے۔

فیٹف اجلاس: پاکستان کے بلیک لسٹ میں جانے کے امکانات نہیں

امید ظاہر کی گئی ہے کہ آئندہ برس کی پہلی ششماہی میں پاکستان گرے لسٹ سے باہر نکال لیا جائے گا

ایف اے ٹی ایف کا ورچوئل اجلاس 21 اکتوبر کو ہو گا

ایف اے ٹی ایف اجلاس میں پاکستان کو گرے لسٹ سے نکالنے کا فیصلہ ہو گا۔

ماضی میں حکمران منی لانڈرنگ میں ملوث رہے، شبلی فراز

مشیر داخلہ شہزاد اکبر کا کہنا ہے کہ کل مجرموں اور ملزموں کی اے پی سی ہونے جارہی ہے

پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس: حکومت نے سینیٹ سے مسترد ہونے والے اہم بل منظور کروالیے

مشترکہ اجلاس میں وزیراعظم عمران خان، قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور چیئرمین پیپلز پارٹی سمیت حکومتی اور اپوزیشن کے ارکان اسمبلی موجود

اے پی سی سے حکومت کو کوئی خطرہ نہیں، گورنر پنجاب

گورنر پنجاب نے کہا کہ انتخابات ضرور ہوں گے مگر 2023 سے پہلے کسی صورت نہیں۔

ایف اے ٹی ایف پر اپوزیشن اور بھارت ایک پیج پر ہیں، وزیراعظم

وزیراعظم کا کہنا ہے کہ اپوزیشن نے حکومت کو بلیک میل کرنے کیلئےایف اے ٹی ایف کی قانون سازی روکی

اپوزیشن، پاکستان کو بلیک لسٹ میں شامل کرانا چاہتی ہے۔ وزیر اعظم

اپوزیشن رہنماؤں کے مفادات ملکی مفادات سے متصادم ہیں، عمران خان

وزیر اعظم کی زیر صدارت ترجمانوں کے اجلاس کی اندرونی کہانی

 اپوزیشن کو کوئی این آر او نہیں دیں گے، ہم ملکی دولت لوٹنے والوں کو کیسے فری ہینڈ دیدیں، وزیراعظم

نواز شریف کو واپس لانے کیلئے برطانوی حکومت سے رابطے کا فیصلہ کیا ہے، شبلی فراز

 حکومت نیب کو کہے گی کہ وہ اس سلسلے میں فارن آفس سے رابطہ کرے ، ہم سمجھتے ہیں کہ اب نوازشریف کو واپس لانا ضروری ہے اور اس سلسلے میں ہماری کوششیں تیز ہوگئی ہیں، وزیر اطلاعات

ٹاپ اسٹوریز