عالمی ادارہ صحت نے کورونا ویکسین کی تقسیم کا پلان تیار کر لیا

ڈبلیو ایچ او کی معاونت کرنے والے ممالک میں امریکا اور چین شامل نہیں ہوں گے

اکتوبر نومبر میں یورپ کورونا سے شدید متاثر ہوگا، ڈبلیو ایچ او کی وارننگ

عالمی وبا کا اختتام تب ہو گا جب ہم اس کے ساتھ جینا سیکھ لیں گے، عالمی ادارہ صحت

پاکستان وبائی امراض سے نمٹنے والے6بہترین ممالک میں شامل

مستقبل میں بھی وبا کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے، اس کے لیے تیار رہنا ہوگا، سربراہ عالمی ادارہ صحت

کورونا کا خطرہ اگلے تین سال تک رہے گا، سائنسدانوں نے خبردار کر دیا

اگلے تین سال تک کورونا کہیں نہیں جا رہا ہے اور اس کی ویکسین میں بھی کافی وقت درکار ہے، جرمن سائنسدان

ڈبلیو ایچ او کی معیشت کھولنے اور لاک ڈاؤن میں نرمی کی حمایت

کوئی بھی ملک کورونا کا خاتمہ نہیں کرسکتا،حقیقت میں یہ وائرس آسانی سے پھیلتا ہے، سربراہ عالمی ادارہ صحت

افریقہ پولیو سے پاک براعظم قرار

افریقہ کے 47 ممالک میں پولیو کا خاتمہ ہو گیا ہے، عالمی ادارہ صحت

کورونا وبا کے خاتمے میں دو برس لگ سکتے ہیں، ڈبلیو ایچ او

زیادہ میل ملاپ سے اس وائرس کے پھیلنے کا زیادہ امکان ہے، ٹیڈروس

روس کی کوروناویکسین کے متعلق زیادہ معلومات نہیں، ڈبلیوایچ او

ہمیں خبرملی کہ روس کےپاس کوروناویکسین ہے اور ہم اس کے متعلق معلومات حاصل کرنےکےمنتظر ہیں،اسسٹنٹ ڈائریکٹرریجنل برانچ

کورونا کی نئی اٹھنے والی لہر کیخلاف ردعمل تیز کرنے کی ضرورت ہے، ڈبلیو ایچ او

سخت اقدامات سے ہی کورونا وائرس کی نئی لہرپر قابو پایا جا سکتا ہے، ڈاکٹر مائیک ریان

ویکسین میں نیشنل ازم اچھا نہیں ہے، عالمی ادارہ صحت

اگر تمام ممالک مل کر صحتیاب ہوں تو کورونا سے ہونے والا نقصان کم ہو گا، ڈاکٹر ٹیڈروس ادہانوم ڈی جی ڈبلیو ایچ او

ٹاپ اسٹوریز