فوج کے حوالے سے قانون سازی صوبوں کا نہیں وفاق کا اختیار ہے،چیف جسٹس پاکستان

اٹارنی جنرل نے کہا کہ یہ اہم اور حساس نوعیت کا کیس ہے اس لیے التوا کی درخواست نہیں کر رہا، آج عدالت دوسرے فریق کو سن لیں تاکہ سماعت  بغیر کارروائی کے ملتوی نہ ہو۔

’طاقتوروں کا طعنہ  ہمیں نہ دیں ، کسی کو باہر جانے کی اجازت انہوں نے خود دی‘

جسٹس آصف سعید خان کھوسہ نے کہا کہ پورے ملک میں اکتیس سو ججز ہیں جنہوں نے چھتیس لاکھ مقدمات کے فیصلے سنائے یہ کہنا کہ جوڈیشل سسٹم میں  توازن نہیں ، یہ بات صحیح نہیں ہے ۔

سپریم کورٹ:دہشت گردی کی تعریف سے متعلق تحریری فیصلہ جاری

عدالت عظمی کے مطابق  ذاتی دشمنی یا عناد کے سبب کسی کی جان لینا دہشت گردی نہیں ہے اور نہ ہی ذاتی دشمنی اور عناد کے باعث جلاؤ گھراؤ، بھتہ خوری دہشت گردی ہے۔

چیف جسٹس پاکستان نے ماڈل کورٹس کے ججز کو قومی ہیروز قرار دے دیا

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ خوابوں کی تعبیر ماڈل کورٹس کے ججز کی کارکردگی کی صورت میں سامنے آ رہی ہیں۔

4 نومبر تک صنفی بنیاد پر تشدد کی عدالتیں قائم کریں ، چیف جسٹس پاکستان

اس ضمن میں لا اینڈ جسٹس کمیشن نے تمام ہائیکورٹس کو مراسلہ جاری کر دیا ہے۔

سپریم جوڈیشل کونسل نے لاہور ہائیکورٹ کے 6ججز کو مستقل کرنے کی سفارش کردی

ذرائع کا کہنا ہے کہ سپریم جوڈیشل کونسل نے لاہور ہائی کورٹ کے ایک ایڈیشنل جج جسٹس شکیل الرحمان کی مدت میں چھ ماہ کی توسیع بھی کردی ہے۔

عدالتوں میں مصنوعی ذہانت متعارف کرا رہے ہیں، چیف جسٹس پاکستان

انہوں نے کہا مجھے اس وقت حیرانی ہوئی اور میں نے گھر میں پہلا کمپیوٹر لیا اور پھر جب پہلا موبائل لیا تو بہت حیران کن لگا۔

ہم مقدمات کی کوالٹی پر نہیں نمبروں پر یقین کر رہے ہیں، چیف جسٹس

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ ججز کے فیصلوں پر وہ لوگ تبصرہ کرتے ہیں جنہیں قانون کا پتہ ہی نہیں ہوتا۔

’عدالت نے جھوٹ بولنے کا لائسنس جاری کر دیا‘

چیف جسٹس پاکستان نے یہ ریمارکس آج سپریم کورٹ میں ویڈیو لنک کے ذریعےقتل کے ایک کیس کی  سماعت کے دوران دئیے۔

ماڈل کورٹس کے چار ماہ مکمل ،بہترین جج کا ایوارڈ جاری کر دیا گیا

جج سہیل ناصر نے یکم اپریل 2019سے تیس جون 2019 تک سب سے زیادہ قتل اور منشیات کے کیس نمٹائے۔

ٹاپ اسٹوریز