پی ٹی آئی کا نظریاتی کارکن مایوسی کا شکار ہوگیا ہے، فاروق ستار کا دعویٰ

پی ٹی آئی کا نظریاتی کارکن مایوسی کا شکار ہوگیا ہے، فاروق ستار کا دعویٰ

نواب شاہ: ایم کیو ایم بحالی کمیٹی کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار نے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کا نظریاتی کارکن بھی مایوسی کا شکار ہو گیا ہے کیونکہ وزیراعظم عمران خان کا رویہ سیاسی نہیں ہے۔

دعا منگی کا اغوا قوم کی بیٹی کا اغوا ہے، ڈاکٹر فاروق ستار

ہم نیوز کے مطابق ہیومن رائٹس کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سابق میئر کراچی ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ ملکی سیاست میں تنزلی کی بنیادی وجہ طلبہ تنظیموں پر پابندی ہے۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ طلبہ یونین کو بحال ہونا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کا المیہ ہے کہ یہاں نظریاتی سیاست ختم ہورہی ہے اور ساری سیاست صرف مراعات، کرسی اور مفادات کے گرد گھوم رہی ہے۔

سابق وفاقی وزیر ڈاکٹر فاروق ستار نے موجودہ طرز حکومت پر کڑی نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا کہ جب بھی ملک میں جمہوریت آتی ہے تو اس میں سویلین آمریت قائم ہو جاتی ہے اور بدقسمتی سے اس وقت بھی یہی ہورہا ہے۔

ایم کیو ایم بحالی کمیٹی کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار نے استفسار کیا کہ مارشل لا ادوار میں بلدیاتی نظام مضبوط اور جمہوریت میں کمزور کیوں ہوتا ہے؟ ان کا کہنا تھا کہ ملک میں آئین و جمہوریت کے ثمرات کو عوام تک پہنچنے ہی نہیں دیا جاتا ہے۔

سندھ کے شہری علاقوں کی سیاست میں گزشتہ تین دہائیوں سے بھرپور اور انتہائی متحرک کردار ادا کرنے والے ڈاکٹر فاروق ستار نے کہا کہ آج مجھ سے پوچھا جاتا ہے کہ میرا تعلق کس سیاسی جماعت سے ہے؟ تو میں کہتا ہوں کہ ہر پارٹی کا بنیادی نظریاتی کارکن میرا اثاثہ اور میری جماعت کا ستاتھی ہے خواہ اس کا تعلق کسی بھی سیاسی جماعت سے ہو۔

فاروق ستار نے ’متحدہ قومی فورم‘ تشکیل دینے کی تجویز دے دی

ہم نیوز کے مطابق ڈاکٹر فاروق ستار نے مشورہ دیا کہ اگر عوام کے ووٹوں سے منتخب ہو کر آئے ہیں تو اپنا رویہ سیاسی بنائیں۔ انہوں نے خبردار کیا کہ ملک میں معاشی بحران بڑھ رہا ہے اور اگر ایسے میں سیاسی بحران بھی پیدا ہوگیا  تو موجودہ نظام بے حد کمزور ہو جائے گا۔

متعلقہ خبریں

ٹاپ اسٹوریز